مربعوں کی دائدہ کہانی | Marbo Ki Daira Khani | Seemi Kiran

Fiction House

Skip to product information
1 of 1
Regular price Rs.300.00 PKR
Regular price Rs.400.00 PKR Sale price Rs.300.00 PKR
Sale Sold out
Shipping calculated at checkout.
معشیت کا خدا ان کے جنگ کہ نام پہ ایک صف پہ لے ہی آیا
اور پھر ایک خونریز جنگ کا آغاز ہوا
ایک طویل دور جیسے کسی سرنگ میں داخل ہو گیا
ابتدا میں اس جنگ نے مقدس چولا پہن کر عام و خاص کے دل جیت لیے تھے !
مگر پھر خون بارود لاشوں کے قیمہ بدنوں کی سڑاند معاشروں کو نگلنے لگی
تب روشن خیالوں کو کچھ ہوش آیا مگر بہت دیر ہو چکی تھی
انسان کو دوبارہ تاریک غار میں دھکلینے والے غالب آنے لگے تھے
وہ ہر مقام جہاں انسانيت پناہ لے سکستی تھی انہوں نے اسے تاراج کردیا
ہر وہ مقام جہاں انسانيت پنپ سکتی تھی روشنی لے سکتی تھی ڈھا دیا گیا
گرجے مندر مسجد امام بارگاہیں مزار اڑا دیے گیے
سکول اپنے ملبوں سمیت ننھی کلیوں کے مزار بن گٸے
ہسپتال بیماروں کی جگہ مردہ خانوں میں بدل گٸے
آرٹ کو بت کہہ کر بت شکن پیدا کیے گٸے
یہ بت شکن غرور وزعم کے نٸے بت نٸے خدا بن گٸے
ان نٸے خداٶں نے آرٹ فن ادب کو سزاۓ موت سنادی
انسان کو زندگی کے جرم میں موسيقی رنگ خوشبو فن و ادب کی ہر صنف سے محروم کرنے کا سزا وار ٹھہرا دیا گیا
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
شاخ جبر کا انوکھا پھل
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کتاب
مربعوں کی داٸرہ کہانی
  • Share your shipping policy
  • Share your packaging details
View full details